6 جولائی 2022

کرپٹو کرنسیاں

اپنی کرپٹو کرنسی کو محفوظ بنائیں: اسٹوریج آپشنز اور بہترین طریقے

ہر کرپٹو کرنسی کے مالک کو اپنے اثاثے اسٹور کرنے کیلئے جگہ درکار ہوتی ہے اور اپنی پسند کا یہ اسٹوریج کا طریقہ زیادہ سے زیادہ محفوظ ہونا چاہیے۔ جبکہ اسٹوریج کیلئے کئی طریقے دستیاب ہیں، جلد یا بدیر وہ لوگ جو کرپٹو کرنسیوں کو طویل مدت کیلئے رکھنا چاہتے ہیں انہیں بالآخر اس بارے میں سوچنا پڑے گا کہ ان کے کرپٹو کی چابیاں دراصل کس کے پاس ہیں۔ 

در حقیقیت، جبکہ آپ اپنے Exness اکاؤنٹ پر اور اس سے کرپٹو کرنسی ڈیپازٹس اور نکلوانے کیلئے Exness بٹ کوئن والٹ استعمال کر سکتے ہیں؛ ان والٹس کو اپنی کرپٹو کی دولت طویل عرصے تک رکھنے کیلئے استعمال نہیں کیا جانا چاہیے۔ 

لہذا پہلے اس کی وضاحت کرتے ہیں کہ یہ والٹس کیا ہیں۔ مختصراً، کرپٹو والٹ ایک ویب یا موبائل/ڈیسک ٹاپ ایپلیکیشن، ہارڈ ویئر آلہ یا یہاں تک کہ کاغذ کا ایک ٹکڑا ہو سکتا ہے جو آپ کی نجی کلید یا سیڈ فریز کو اسٹور کر سکے۔ نجی کلیدیں حرف عددی فارمیٹ یا زیادہ عمومی طور پر ایک سیڈ فریز کے طور پر ہو سکتی ہیں جو کہ عام انگریزی حروف کی ایک ترتیب وار فہرست ہوتی ہے۔ اگر کسی کے پاس آپ کی نجی کلید تک رسائی موجود ہے تو اس کا مطلب ہے کہ اس کے پاس آپ کے والٹ میں موجود فنڈز تک رسائی موجود ہے اور اسی لیے صرف آپ کے پاس آپ کی نجی کلید کی رسائی ہونی چاہیے اور آپ کو کبھی بھی کسی اور کے ساتھ اسے شیئر نہیں کرنا چاہیے۔

ذیل میں ہم آپ کو دستیاب مختلف کرپٹو کرنسی آپشنز کو ان کے خطرات، فوائد اور نقصانات کے ساتھ بیان کریں گے۔

کسٹوڈیل والٹس

والٹ کی نجی کلید تک رسائی کے لحاظ سے کرپٹو کرنسی اسٹور کرنے کے دو طریقے ہیں، کسٹوڈیل اور نان کسٹوڈیل والٹس۔

کسٹوڈیل والٹس تیسرے فریق (کسٹوڈین) کی جانب سے فراہم اور کنٹرول کردہ والٹس ہیں۔ عام طور پر تیسرا فریق ایک کرپٹو کرنسی ایکسچینج ہوتا ہے جو آپ کی نجی کلید کو کنٹرول کرتا ہے۔

یہ ایک آسان ترین اور سب سے سہل آپشن ہے کیونکہ کسٹوڈین آپ کے والٹ کو مؤثر انداز میں ہینڈل کرے گا اور آپ کو اپنی نجی کلید کھو دینے سے متعلق فکر کی ضرورت نہیں ہوگی۔ جب تک آپ کے پاس اپنے ایکسچینج اکاؤنٹ تک رسائی ہے تب تک آپ اپنی کرپٹو تک رسائی حاصل کر سکتے ہیں۔ تاہم، یہ آسانی سب سے کم حفاظت کی سطح کے ساتھ ہے۔

  • 1.

    چونکہ کسٹوڈین کو آپ کے کرپٹو اثاثوں پر مکمل کنٹرول ہوتا ہے، وہ ایکسچینج پر کسی دھوکہ دہی سے متعلق سرگرمی یا کسی بھی دوسری وجہ سے آپ کی ملکیت کو منجمد کر سکتا ہے 

  • 2.

    ناقابل اعتماد کسٹوڈینز سکیمز کے خطرے کی زد میں ہوتے ہیں

  • 3.

    کسٹوڈینز کو ہیک کیا جا سکتا ہے جیسا کہ ہم ماضی میں دیکھ چکے ہیں

  • 4.

    آپ کی کسٹوڈین کی اسناد لیک ہو سکتی ہیں یا انہیں چرایا جا سکتا ہے

  • 5.

    متعدد عوامل والی تصدیق (MFA) کو SIM سویپنگ یا TOTP کی لیک کے ذریعے بائی پاس کیا جا سکتا ہے

اس لیے کسٹوڈیل والٹس کو اپنی کرپٹو کی طویل مدتی اسٹوریج کیلئے استعمال نہیں کیا جانا چاہیے۔

نان کسٹوڈیل والٹس

نان کسٹوڈیل والٹس مکمل طور پر آپ کی زیر ملکیت اور زیر کنٹرول ہوتے ہیں کیونکہ اس کی نجی کلید یا سیڈ فریز تک رسائی صرف آپ کے پاس ہوتی ہے۔ عموماً، نان کسٹوڈیل والٹس دو قسم کے ہوتے ہیں: ہاٹ والٹس اور کولڈ والٹس۔

ہاٹ والٹس، جیسے ڈیسک ٹاپ اور موبائل والٹس انٹرنیٹ سے منسلک آلات پر آپ کی نجی کلیدیں جنریٹ اور اسٹور کرتے ہیں۔ انٹرنیٹ تک رسائی ٹرانزیکشنز کو تیز اور آسان بناتی ہے، تاہم یہ ان والٹس کو کرپٹو کرنسی کی چھوٹی رقوم کیلئے استعمال کیا جاتا ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے ہیکرز کیلئے ہاٹ والٹس سے وابستہ سیکیورٹی کی کمزوریاں جیسے میلویئر اور وائرسز دریافت کرنا اور ان کا فائدہ اٹھانا نسبتاً زیادہ آسان ہوتا ہے۔

ہاٹ اسٹوریج کی فوائد اور نقصانات

  • ·

    آسان اور سہل ٹرانزیکشنز - روز مرہ کے استعمال کیلئے ایک متوازن طریقہ

  • ·

    کولڈ والٹس کے مقابلے میں کم سیکورٹی لیول

  • ·

    سیڈ فریز کھونے کی صورت میں اپنی کرپٹو سے محروم ہونے کا خطرہ

موبائل والٹس اسمارٹ فونز کی سہولت کی وجہ سے تیزی سے مقبول ہوئے ہیں۔ دوسری طرف یہ اسکیمز کی وجہ بھی بنے ہیں جیسے جائز سروسز کی نقل کرنے والی ویب سائٹس کے ذریعے نقصان دہ Android اور iOS ایپس کی ڈسٹریبیوشن۔ یہ نقصان دہ ویب سائٹس Trust Wallet، Coinbase Wallet، MetaMask اور دیگر مقبول موبائل والٹس کی نقل کر کے متاثرہ فرد کا سیڈ فریز چرانے کی صلاحیت رکھتی ہیں۔ ایسے حملے بہت نفیس انداز اختیار کر چکے ہیں، حملہ آور آفیشل ایپس میں اس طریقے سے ترمیم کرتے ہیں کہ نقصان دہ سرگرمی وک شناخت کرنا مشکل ہوتا ہے کیونکہ یہ ہر طریقے سے اصل ایپس سے مماثل ہوتے ہیں۔ یہ ٹروجن والی ایپس مختلف چینلز کے ذریعے تقسیم کی جاتی ہیں بشمول جعلی والٹ ویب سائٹس اور Telegram گروپس۔ دو حالیہ ترین اسکیمز SeaFlower اور CryptoRom ہیں جو موبائل والٹ کے صارفین کو نشانہ بناتے ہیں۔

دیگر میلویئر آپ کے آلہ کی کلپ بورڈ کی سرگزشت پر قبضہ کر سکتے ہیں اور آپ کے کاپی کیے گئے کسی پتے کو چور کے والٹ کے پتے سے تبدیل کر سکتے ہیں۔ لہذا پتے کاپی پیسٹ کرتے ہوئے صارف کو یہ یقینی بنانے کیلئے دو بار چیک کرنا چاہیے یہ پتہ وہی ہے جو وہ کاپی کرنا چاہتے تھے۔

کولڈ والٹس، جیسے ہارڈ ویئر والٹس یا یہاں تک کے پیپر والٹس آپ کی نجی کلیدوں کو آف لائن محفوظ کرتے ہیں۔ چونکہ یہ انٹرنیٹ سے منسلک نہیں ہوتے ہیں، یہ ہاٹ والٹس کے مقابلے میں زیادہ سیکیورٹی کی پیشکش کرتے ہیں۔ استعمال میں سہولت کے ساتھ نقصان بھی ہے تاہم ٹرانسفرز کرنے کیلئے ان والٹس کو انٹرنیٹ سے منسلک ڈیوائس کے ساتھ ملا کر استعمال کرنا ہوتا ہے۔

Ledger Nano X، ایک مقبول ہارڈ ویئر والٹ
Ledger Nano X، ایک مقبول ہارڈ ویئر والٹ

کولڈ اسٹوریج کے فوائد اور نقصانات

  • ·

    زیادہ سیکیورٹی فراہم کرتا ہے

  • ·

    ہارڈ ویئر والٹس آپ کو ٹرانسفرز کرتے ہوئے موصول کنندہ کا پتہ دو بار چیک کرنے کی سہولت دیتے ہیں

  • ·

    آلہ کی لاگت اور پریشانی (سافٹ ویئر والٹس کے مقابلے میں) استعمال میں رکاوٹیں پیدا کرتے ہیں

  • ·

    سیڈنگ فریز یا نجی کلید کھو دینے کی صورت میں والٹ تک رسائی سے محروم ہونے کا خطرہ

  • ·

    ہر ہارڈ ویئر والٹ کچھ مخصوص قسم کی کرپٹو کرنسی اسٹور کر سکتا ہے 

تاہم کسی بھی دوسرے والٹ کی طرح کولڈ والٹس پر بھی انسانی غلطی کے امکانات ہوتے ہیں مثلاً اسکیمرز جعلی ہارڈ ویئر والٹس بھیج سکتے ہیں جن میں کرپٹو چرانے کیلئے بنائے گئے ہارڈ ویئر موجود ہوتے ہیں۔ آلہ شروع کرنے کیلئے صارف سے ان کے 24 لفظی بحالی کے جملے کا پوچھا جاتا ہے، جو کہ پھر حملہ آور والٹ کی نجی کلیدیں جنریٹ کرنے کیلئے استعمال کر سکتے ہیں۔

اس کے علاوہ، تمام ہارڈ ویئر والٹ وینڈرز اپنا سورس کوڈ عوامی کیلئے آسانی سے قابل رسائی نہیں بناتے۔ لہذا اس متعلق اضافی تحقیق کرنا کہ ہارڈ ویئر اور سافٹ ویئر محفوظ ہیں سود مند ثابت ہو سکتا ہے۔ 

اپنی کرپٹو کے تحفظ کیلئے سیکیورٹی کے اعلی ترین اقدامات اور بہترین طریقے

  • 1.

    کرپٹو کرنسی جمع کرنے کیلئے کولڈ والٹس استعمال کریں

  • 2.

    ہاٹ یا کسٹوڈیل والٹس کو کرپٹو کی چھوٹی رقوم کیلئے استعمال کریں جو آپ ٹریڈنگ کیلئے دستیاب رکھنا چاہتے ہیں

  • 3.

    اپنی نجی کلیدوں اور سیڈ فریزز کو چوری سے بچائیں۔ انہیں کبھی کسی کے ساتھ شیئر نہ کریں۔ انہیں کھونے کا خطرہ کم کرنے کیلئے کاپیاں بنائیں اور انہیں مختلف مقامات پر محفوظ کریں یا اپنی کرپٹو متعدد ہارڈ ویئر والٹس میں اسٹور کریں۔ 

  • 4.

    طاقتور پاس ورڈز استعمال کریں۔ پاس ورڈ مینیجرز سب سے محفوظ آپشن ہیں

  • 5.

    کرپٹو کرنسی میں جعلسازی کے حملے سب سے مؤثر سکیمز میں سے ایک ہیں۔ نامعلوم یا مشتبہ اشتہارات اور لنکس پر کلک کرنے سے گریز کریں۔

  • 6.

    اپنے آلے کو باقاعدگی سے اینٹی میلویئر سافٹ ویئر کے ساتھ چیک کریں۔

  • 7.

    صرف معتبر اور اور اچھی شہرت والی ہستیوں کے ساتھ ڈیل کریں

  • 8.

    تیسری پارٹیوں کی جانب سے پیش کردہ کسی بھی نیز تمام سرمایہ کاری کے آپشنز کو اچھی طرح چیک کریں۔ جائز کرپٹو ایکسچینجز اور بروکرز آپ کے کرپٹو کرنسی میں مشغول ہونے سے پہلے آپ کو بارہا یاددہانی کروائیں گے کہ کرپٹو کرنسی میں خطرہ موجود ہے 

  • 9.

    کرپٹو ٹرانسفرز کیلئے کوئی پتہ کاپی پیسٹ کرتے ہوئے یقینی بنائیں کہ یہ وہی پتہ ہے جہاں ٹرانسفر کیا جانا ہے

  • 10.

    اگر ممکن ہو تو اپنی ٹرانزیکشنز کیلئے ایک آلہ استعمال کریں

  • 11.

    اپنا سافٹ ویئر ہمیشہ اپ ٹو ڈیٹ رکھیں

  • 12.

    ملٹی سگنیچر والٹ استعمال کریں جس میں ٹرانزیکشنز پر عمل درآمد کیلئے دو یا زائد لوگوں کی منظوریاں درکار ہوتی ہیں

  • 13.

    سیڈ فریز کو حصوں میں تقسیم کریں اور ہر حصے کو مختلف مقام پر اسٹور کریں

یاد رکھیں کہ خواہ یہ اچھا ہو یا برا کرپٹو کرنسیاں لا مرکزی اثاثے ہیں اور اپنی کرپٹو کرنسی کو محفوظ رکھنے کی ذمہ داری صرف آپ کی اپنی ہے۔ یقینی بنائیں کہ آپ تمام بنیادی سیکیورٹی کے اقدامات سے آگاہ ہوں تاکہ آپ اپنی کرپٹو کی رقم اور اپنی خطرے کی رواداری کی بنیاد پر سیکیورٹی لیول کا انتخاب کر سکیں۔ 

متعلقہ مضامین