15 جولائی 2022

مارکیٹ تجزیہ

فیول کی قیمتوں کو ہیج کرنے کیلئے تیل کے معاہدے ہیج کرنا

oil price v fuel price
oil price v fuel price

پمپ پر گاڑی میں فیول ڈالنا اس سے مہنگا کبھی نہ تھا، جس سے لاکھوں لوگوں کا معیار زندگی متاثر ہو رہا ہے، مگر ریٹیل سرمایہ کاران کے پاس بڑھتے ہوئے خام تیل اور فیول کی قیمتوں کو آف سیٹ کرنے کی حکمت عملی موجود ہے۔ آئیں تیل کی تکنیکی پہلوؤں پر ایک ایک فوری نظر ڈالتے ہیں اور پھر 2022 اور اس کے بعد تیل کی ٹریڈنگ کی ایک بہت اچھی وجہ پر غور کرتے ہیں۔

تیل کا تکنیکی تجزیہ

تکنیکی تجزیہ ظاہر کرتا ہے کہ US Oil نے اوپر کے رجحان کو $106.25 کی قیمت پر توڑا، دوبارہ ٹیسٹ ہوا اور پھر دوبارہ $100 سے نیچے چلا گیا۔

رجحان کو توڑنے والی لائن کے ساتھ خام تیل 2022 قیمت کی سرگزشت
رجحان کو توڑنے والی لائن کے ساتھ خام تیل 2022 قیمت کی سرگزشت

اس وقت $94.50 - $102 کی قیمت کی رینج کے آس پاس موجود US Oil 50% - 38.2% کی فبوناچی ریٹریسمنٹ رینج کے درمیان حرکت کر رہا ہے اور اسے 38.2% مارک سے طاقتور مزاحمت کا سامنا ہے۔ اگر یہ حالیہ تنزلی جاری رہتی ہے تو ہم تیل کو قیمتوں کو سپورٹ 2 تک جاتا دیکھ سکتے ہیں۔

فبوناچی ریٹریسمنٹ کے ساتھ خام تیل 2022 کی قیمت کی سرگزشت
فبوناچی ریٹریسمنٹ کے ساتھ خام تیل 2022 کی قیمت کی سرگزشت

لہذا تیل کی خریداری اور قیمت زیادہ ہو سکتی ہے جس کی وجہ سے یہ ایک شارٹنگ موقع معلوم ہوگا مگر طویل مدتی رجحان اس کے برعکس تجویز کرتا ہے۔ موجودہ قیمت کی کارروائی کے پیش نظر تیل کی ٹریڈنگ ایک پُر خطر تجویز ہو سکتی ہے۔

تیل کی ٹریڈ سے متعلق بنیادی باتیں

ہیج فنڈ کے عمومی پمپ اور ڈمپس سے ہٹ کر، جنگ اور کارپوریٹ منافع آج تیل کی قیمت پر سب سے زیادہ اثر رکھنے والے دو عوامل ہیں۔ طلب اور رسد کا ڈائنامک اب بھی اتار چڑھاؤ کا شکار ہے اور آسانی یا استحکام کی کوئی علامت موجود نہیں ہے۔ 

اس عدم استحکام کو بڑھاوا دینے کیلئے عالمی تیل کے پروڈیوسرز نے گزشتہ 12 ماہ میں پروڈکشن کو خاطر خواہ حد تک کم کر دیا ہے جس سے ایک جھوٹی قلت پیدا ہو گئی ہے۔ تیل نکالنے کا عمل کم کرنے کا آرڈر بڑی تیل کی ٹاپ کمپنیوں کی طرف سے ہی آیا ہے۔ ایک سے زائد ریفائنریز نے تیل نکالنے کے حجم کو بنا کسی خاص وجہ کے کم کر دیا ہے، جس کی وجہ سے امریکہ، اہم ممالک اور اہم پارٹیاں پریشانی کا شکار ہیں۔

گزشتہ ہفتے، امریکی صدر جو بائیڈن نے بڑی تیل کی کمپنیوں سے اس بات پر وضاحت طلب کی کہ وہ مارکیٹ کو مستحکم کرنے کیلئے پروڈکشن بڑھا کیوں نہیں رہی ہیں، حالانکہ سب کو پتہ ہے کہ جواب بڑھے ہوا قلیل مدتی منافع کے سوا کچھ نہیں ہے۔

"جنگ کے اس وقت میں، نارمل سے کئی زیادہ ریفائنری کے منافع کے مارجنز جو کہ براہ راست امریکی خاندانوں کو اٹھانے پڑ رہے ہیں قابل قبول نہیں ہے"،  امریکہ صدر جو بائیڈن نے تیل کی کمپنیوں کو ایک حالیہ خط میں لکھا۔

مگر پمپس پر فیول بھرواتے ہوئے پریشانی صرف امریکہ کے لوگوں تک محدود نہیں ہے۔ دنیا بھر میں فیول کی قیمتیں دوگنا ہوئی ہیں جو بڑھتی ہوئی بے روزگاری اور عالمی ریٹیل سیلز میں کمی کی وجہ بن رہی ہے۔ جبکہ تیل کی کمپنیاں بڑے منافعوں سے لطف اندوز ہو رہی ہیں، دنیا ایک دوسرے معاشی بحران سے بچنے کیلئے تگ و دو کر رہی ہے۔

پوری معاشی دنیا کی صورتحال انتہائی غیر سازگار ہے مگر شاید ریٹیل ٹریڈرز کے پاس مہنگائی کا وار ہلکا کرنے کا طریقہ موجود ہے۔

فیول کی لاگتوں کو آف سیٹ کرنے کیلئے تیل کے فیوچرز معاہدوں کی ٹریڈنگ

اسے فیول کی ہیجنگ کہا جاتا ہے اور یہ عموماً فیول کی زیادہ کھپت والی انڈسٹریاں جیسے ایئر لائنز، شپنگ اور نقل و حمل کی کمپنیاں استعمال کرتی ہیں۔ وہ ایسا سالوں سے کر رہی ہیں مگر قیمت کے یہی میکانکس صرف کمپنیاں ہی نہیں عام افراد بھی استعمال کر سکتے ہیں۔

اگر آپ تیل پر خریدنے پوزیشن کھولتے ہیں اور قیمت بڑھ جاتی ہے تو ممکنہ طور پر فیول کی قیمتیں بھی بڑھ جائیں گی۔ آپ پمپس پر رقم کا نقصان کریں گے مگر اپنے ٹریڈنگ پلیٹ فارم پر منافع کمائیں گے۔ اسی طرح، اگر تیل اور پیٹرول کی قیمتیں گرتی ہیں تو آپ کی ٹریڈز کے نتائج منفی ہوں گے مگر اگلی بار فیول بھرواتے ہوئے رقم بچا کر، آپ پمپس پر جیت جائیں گے۔

فیول کی قیمتوں کی ہیجنگ شروع کرنے کیلئے پہلے اپنے ہفتہ وار فیول کے استعمال کی اوسط نکالیں۔ اگر فیول کی قیمت $0.10 سے بڑھتی ہے تو اس سے آپ کا اضافی خرچہ کتنا ہو جاتا ہے؟ اب اپنے ٹریڈنگ پلیٹ فارم پر جائیں اور اور حساب لگائیں کہ آپ کو فیول کی قیمت میں اضافے کو آف سیٹ کرنے جتنا منافع کمانے کے واسطے کتنا US Oil خریدنا ہوگا۔

قیمت کی مختصر تاخیر کو ملحوظ خاطر رکھیں کیونکہ گیس اسٹیشنز اپنی فیول کی قیمتیں موجودہ مارکیٹس کے حساب سے نہیں بلکہ اس حساب سے سیٹ کرنے ہیں جو انہوں نے ٹینکرز کو ادا کیا۔ ہو سکتا ہے آپ کیلئے ریگولر بنیادوں پر آرڈرز کو کھولنا اور بند کرنا بہتر ہو لیکن اگر آپ کبھی کبھار آرڈرز کو رات بھر بھی کھلا رکھتے ہیں تو Exness سویپ فیس چارج نہیں کرے گی۔

کیا یہ مکمل طور پر نقص سے پاک حکمت عملی ہے؟ ںہیں… ہرگز نہیں۔ مارکیٹ ہمیشہ ناقابل پیشگوئی ہوتی ہیں، تاہم اگر آپ نے اپنی کیلکولیشنز درست کی ہیں تو صرف تیل اور پمپ کی قیمتوں کے درمیان کا انحراف ہی آپ کیلئے مشکل کا باعث بن سکتا ہے اور ایسا گزشتہ 30 سال میں نہیں ہوا ہے۔

خلاصہ

یہ ذہن میں رکھتے ہوئے کہ گزشتہ کارکردگی مستقبل کے نتائج مستقبل کے نتائج کی ضمانت نہیں ہے، ٹیکنیکلز اس وقت خریدنے یا فروخت کرنے کے موقع کی نشاندہی نہیں کرتے۔ ہمیشہ کی طرح، مارکیٹ قابل پیشگوئی روٹینز فالو کرتی ہے… جب تک اس کے برعکس نہ ہو۔ آپ خواہ کوئی بھی اثاثہ ٹریڈ کریں کوئی نہ کوئی سرپرائز ملے گا ہی لہذا ذمہ داری سے ٹریڈ کریں اور احتیاط سے اپنے فنڈز کا نظم کریں۔ فیول کی قیمتوں کو ہیج کرنا اس وقت کارآمد ہو سکتا ہے لیکن اگر سبھی ایسا کرتے ہیں تو ہم تاریخ میں پہلی بار تیل اور فیول کی قیمت میں انحراف دیکھ سکتے ہیں۔

فعال قیمت کی رینج کے قریب اسٹاپ لاس لگانا مت بھولیں، خاص طور پر اگر آپ Exness کی زیادہ لیوریج کا فائدہ اٹھا رہے ہیں۔

متعلقہ مضامین